(Zarb-e-Kaleem-048) (مدنیت اسلام) Madniyat-e-Islam

مدنیت اسلام

بتاوں تجھ کو مسلماں کی زندگی کیا ہے
یہ ہے نہایت اندیشہ و کمال جنوں

طلوع ہے صفت آفتاب اس کا غروب
یگانہ اور مثال زمانہ گونا گوں!

نہ اس میں عصر رواں کی حیا سے بیزاری
نہ اس میں عہد کہن کے فسانہ و افسوں

حقائق ابدی پر اساس ہے اس کی
یہ زندگی ہے، نہیں ہے طلسم افلاطوں!

عناصر اس کے ہیں روح القدس کا ذوق جمال
عجم کا حسن طبیعت، عرب کا سوز دروں!

English Translation:

مدنیت اسلام

بتاوں تجھ کو مسلماں کی زندگی کیا ہے
یہ ہے نہایت اندیشہ و کمال جنوں

ISLAMIC CIVILIZATION
I would to you a Muslim’s life expound, it is the height of thought and craze profound.
طلوع ہے صفت آفتاب اس کا غروب
یگانہ اور مثال زمانہ گونا گوں!

Like sun, his rise and setting both are rare, he veers with Time and would e’er truth declare.
نہ اس میں عصر رواں کی حیا سے بیزاری
نہ اس میں عہد کہن کے فسانہ و افسوں

He is not sick of modesty like the current age, black art and myths his attention don’t engage.
حقائق ابدی پر اساس ہے اس کی
یہ زندگی ہے، نہیں ہے طلسم افلاطوں!

On lasting truths its foundations firmly rest, no Plato’s conceit but life replete with zest.
عناصر اس کے ہیں روح القدس کا ذوق جمال
عجم کا حسن طبیعت، عرب کا سوز دروں!

Like Gabriel it owns fine taste and grace, has warmth of Arabs and mind like Persian race.
(Translated by Syed Akbar Ali Shah)

Comments are closed.

Create a free website or blog at WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: