(Zarb-e-Kaleem-003) Tamheed

نہ دیر میں نہ حرم میں خودی کی بیداری کہ خاوراں میں ہے قوموں کی روح تریاکی اگر نہ سہل ہوں تجھ پر زمیں کے ہنگامے بری ہے مستی اندیشہ ہائے افلاکی

(Zarb-e-Kaleem-002) Nazreen Se

ناظرین سے جب تک نہ زندگی کے حقائق پہ ہو نظر تیرا زجاج ہو نہ سکے گا حریف سنگ یہ زور دست و ضربت کاری کا ہے مقام میدان جنگ میں نہ طلب کر نوائے چنگ خون دل و جگر سے ہے سرمایہ حیات فطرت، لہو ترنگ ہے غافل! نہ، جل ترنگ از- علامہ محمد... Continue Reading →

Create a free website or blog at WordPress.com.

Up ↑